صدارتی سیکرٹریٹ ، کیمپ آفس کشمیر ہاؤس اسلام آباد

صدارتی سیکرٹریٹ ، کیمپ آفس کشمیر ہاؤس اسلام آباد
14-12-2018
***

اسلام آباد ( )آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان آزادکشمیر کی سرکاری جامعات کے وائس چانسلرز حضرات کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنی اپنی جامعات کے طلبہ و طالبات کو مائیکرو سافٹ آفس سپیشلسٹ امتحان ( ماس ورلڈ چیمپیئن شپ 2019) کے لئے تیار کریں تاکہ وہ اس عالمی مقابلے میں حصہ لے کر اپنے ملک اور مادر علمی کے نام روشن کر سکیں۔ یہ بات انہوں نے جموں وکشمیر ہاؤس میں ٹیکنیکل ایجوکیشن سینٹر (ٹیک) کی چیف ایگزیکٹیو آفیسر سینیٹر انجینئر رخسانہ زبیری کی جانب سے دی گئی بریفنگ کے بعد اظہار خیال کرتے ہوئے کی۔ بریفنگ میں آزاد جموں وکشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد کلیم عباسی، میر پور یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر حبیب الرحمن ، یونیورسٹی آف پونچھ راولاکوٹ کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد رسول جان، یونیورسٹی آف کوٹلی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر دلنواز احمد گردیزی ، وویمن یونیورسٹی آف آزاد جموں وکشمیر باغ کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد حلیم خان اور سیکرٹری صدارتی امور محمد ظفر خان نے بھی شرکت کی۔ صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ اگلے سال جولائی میں امریکہ میں ہونے والے اس بین الاقوامی ایونٹ میں دنیا بھر سے آئی ٹی کے شعبے سے وابستہ نوجوان اور ماہرین حصہ لے کر اپنی ذہانت و قابلیت کے جوہر دکھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آزادکشمیر کے نوجوانوں اور طلبہ کے لئے اپنی صلاحیتوں کو نکھارنے کے لئے ایک اہم موقع ہو گا جس سے بھر پور فائدہ اٹھایا جانا چاہیے۔ صدر آزادکشمیر نے کہا کہ آزادکشمیر کی سرزمین علم و دانش اور سیکھنے سکھانے کے عمل کے لئے نہایت زرخیز ہے اور ہمیں یقین ہے کہ اگر ہمارے نوجوانوں کو مناسب مواقع ملیں تو وہ اپنی خداداد صلاحیتوں کے جوہر کھل کر دکھا سکتے ہیں۔ صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ انفارمیشن اور ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے انقلاب نے دنیا کو بدل کر رکھ دیا ہے۔ اب ایک ہاتھ میں سما جانے والا موبائل فون نے انسان کو کاغذ اور قلم سے بے نیاز کر دیا ہے اس لئے ہمارے نوجوانوں کو دنیا میں تیزی سے ترقی کرتی ہوئی ٹیکنالوجی کو سیکھنا اور سمجھنا ہو گا تاکہ وہ دنیا کے ساتھ قدم سے قدم ملا کر چل سکیں۔ صدر آزاد جموں وکشمیر سردار مسعود خان نے جامعات کو ہدایت کی کہ وہ ماس ورلڈ چیمپیئن شپ کے بارے میں طلبہ کے اندر آگاہی پیدا کرنے کے لئے طلبہ کے درمیان بین الجامعاتی مقابلہ جات کا انعقاد بھی کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ طلبہ کے مابین ایسے مقابلہ جات سے جہاں طلبہ کو اس عالمی مقابلہ میں تیاری کے ساتھ حصہ لینے کی ترغیب ملے گی وہاں آئی ٹی کی تعلیم کے بارے میں بھی شعور اور آگاہی میں اضافہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ دار میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا معیشت سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی میں کردار بڑھ گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے مقابلہ جات میں حصہ لینے سے ہمارے طلبہ کے ویژن میں اضافہ کے ساتھ ساتھ ان کے لئے کیرئیر کے نئے دروازے بھی کھلیں گے۔
قبل ازیں اپنی بریفنگ میں ٹیکنیکل ایجوکیشن سنٹر کی چیف ایگزیکٹیو آفیسر انجینئر رخسانہ زبیری نے شرکاء کو بتایا کہ ماس چیمپیئن شپ ایونٹ پاکستانی نوجوانوں کو آئی ٹی کے شعبے میں اپنی مہارت دکھانے کے لئے ایک اہم موقع ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ مائیکرو سافٹ سپیشلت سرٹیفکیٹ اساتذہ، طلبہ اور تعلیمی اداروں کے نظام کے لئے یکساں اہمیت کا حامل ہے۔ طلبہ اس پروگرام کے جملہ فیچر اور خصوصیات کے بارے میں مہارت حاصل کر کے اپنی تعلیمی استعداد میں قابل ذکر اضافہ کر سکتے ہیں اور عملی زندگی میں کامیابیاں حاصل کر سکتے ہیں۔ اس موقع پر آزادجموں وکشمیر کی پانچوں جامعات کے وائس چانسلر حضرات نے اپنی اپنی جامعات میں انفارمیشن ٹیکنالوجی اور کمپیوٹر لٹریسی کے پروگرامز کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا اور اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے میدان میں طلبہ کو نئے رجحانات سے ہم آہنگ تعلیم کے مواقع فراہم کرنے میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کریں گے۔ جامعات کے وائس چانسلرز نے ٹیکنیکل ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے کردار کو بھی سراہا جو وہ ملک میں انفارمیشن ٹیکنالوجی اور کمپیوٹر لٹریسی کے فروغ کے لئے کر رہی ہے۔ انہوں نے ٹیک فاؤنڈیشن کی چیف ایگزیکٹیو آفیسر کو اس سلسلہ میں ہر قسم کے تعاون کا یقین دلایا۔

Download as PDF